چکدرہ چترال سی پیک روٹ کی عدم بحالی، اپوزیشن جماعتوں کا 15اگست کو یوم سیاہ منانے کا اعلان

جماعت اسلامی لوئردیر کے زیر اہتمام آل پارٹیز کانفرنس کا انعقاد، اے این پی، جمعیت، پی پی اور ن لیگ کی شرکت، 8اگست کو ہونیوالی اے پی سی کے فیصلوں کی توثیق

بلامبٹ (نمائندہ شہباز) چکدرہ چترال سی پیک روٹ کی بحالی کیلئے اپوزیشن جماعتوں نے ایکا کرتے ہوئے15اگست کو یوم سیاہ منانے کا اعلان کر دیا جبکہ آئندہ کا لائحہ عمل طے کرنے کیلئے 23رکنی ایگزیکٹیو کونسل تشکیل دے دیا ،اس حوالے سے جماعت اسلامی لوئر دیر کے زیر اہتمام یہاں کی ایک مقامی ہوٹل میں آل پارٹیز کانفرنس منعقد ہوئی ،جس میں سابق گورنر انجینئر شوکت اللہ ،سابق صوبائی وزیر اور صوبائی اسمبلی میں جے آئی کے پارلیمانی لیڈر عنایت اللہ خان ،جماعت اسلامی کے ضلعی امیر اعزاز الملک افکاری ،جے یوائی کے ضلعی امیر سراج الدین ،دیر بالا سے سابق ممبر قومی اسمبلی صاحبزادہ طارق اللہ ،لوئر دیر سے سابق ممبر قومی اسمبلی صاحبزادہ محمد یعقوب خان ،باجوڑ سے سابق ممبر قومی اسمبلی ہارون الرشید ،ملک محمد آیاز خان ،پی پی پی کے ضلعی جنرل سیکرٹری اشفاق باچا،ضلعی سیکرٹری و سابق سٹی ناظم عالمزیب ایڈوکیٹ ،اے این پی کے ضلعی جنرل سیکرٹری ملک محمد زیب خان ،سابق ضلعی ناظم حاجی عنایت اللہ ،ٹ ٹریڈ یونین تیمرگرہ کے صدر حاجی انوار الدین ،ٹھیکیداریونین کے صدر اکرام اللہ ،جے یوائی کے ضلعی جنرل سیکرٹری جاوید اقبال ،قاضی غیاض الدین ،خورشید خان ،دیر قامی پاثون کے ابراش خان کے علاوہ وکلاء اور دیگر تنظیموں کے نمائندوں نے شرکت کی

ال پارٹیز کانفرنس میں 8اگست کو ہونے والے پانچ اضلاع دیر لوئر ،دیر بالا،اپر چترال ،لوئر چترال اور باجوڑ کے ال پارٹیز کانفرنس میں کیے گئے فیصلوں کی تو ثیق کی گئی ،اس موقع پر مقررین نے صوبائی حکومت کی جانب سے چکدرہ چترال موٹر وے کو خوش ائند ہ قرار دیتے ہوئے کہاکہ اس اعلان کردہ منصوبے میں کاٖی شکوک و شہبات کے ساتھ اسے کابینہ سے منظور بھی نہیں کیاگیا ہے جس پر ان پانچ اضلاع کے سیاسی اور قومی قیادت کو شدید تحفظات ہے ،

انھوں نے کہاکہ موجودہ حکومت نے پہلے سے منظور شدہ منصوبہ کو نکال کر 25لاکھ سے زائد آبادی کے ساتھ ظلم اور زیادتی کی ،آل پارٹیز کانفرنس میں چکدرہ چترال سی پیک روٹ کی بحالی کیلئے شروع کردہ احتجاجی تحریک کو جاری رکھنے کا فیصلہ کیا اور کہاگیا کہ چکدرہ چترال سی پیک روٹ کی بحالی ائندہ نسلوں اور ان کی بقاء کا مسئلہ ہے اور اس کی بحالی کیلئے کسی دھوکہ میں نہیں ائے گے اور احتجاجی تحریک کو منطقی انجام تک پہنچائے گے ،مقررین نے مطالبہ کیا کہ عوام کی انکھوں میں دھول جھونکے اور ورغلانے کی بجائے اس پر و جیکٹ کو اپنی اصل حیثیت میں PSDPکا حصہ بنا دیا جائے او ر فوری طورپر اس کیلئے فنڈز مختص کرکے اس منصوبے پر عملی کام کا آغاز کیا جائے ،ال پارٹیز کانفرنس میں 15 اگست کو یوم سیاہ منانے کا فیصلہ کیاگیا ،نتیجے میں ضلع کے تمام بازاروںمیں سیاہ جھنڈے لہر ائے جائیں گے جبکہ ضلع کے تمام تحصیلوں میں احتجاجی جلسے منعقد کیے جائیں گے ۔

یہ بھی پڑھیں

وزیراعظم کا افغانستان سے تجارت کرنیوالوں کیلئے بارڈر مارکیٹیں کھولنے کا اعلان

مہمند : وزیراعظم عمران‌ خان نے کہا ہے کہ اسمگلنگ پاکستان کو تباہ کررہی ہے، …

%d bloggers like this: