مقامی انتظامیہ سیاسی لوگوں کے خلاف ناکام پالیسی پر عمل پیرا ہے، پی پی مہمند

مہمند(نمائندہ شہباز)پاکستان پیپلز پارٹی مہمندکے سینئر نائب صدرارشد بختیار اورجنرل سیکرٹری شاہ سوار خان اور دیگر نے کہا ہے کہ مقامی انتظامیہ اور ڈی پی او مہمند سیاسی شخصیات کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں جو کہ فاٹا مرجر کو ناکام بنانے اور عوام کو اس نظام سے متنفر کرنے کے مترادف ہے۔

مہمند پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ صوبائی اور وفاقی وزراء کے دوروں میں سیاسی لوگوں اورسٹیک ہولڈرز کو نظرانداز کرکے منظور نظرافراد کو دعوت دی جاتی ہے اور یہ عمل خاص کرکھلی کچہری میں کیا جارہاہے کیونکہ سیاسی جماعتوں کے نمائندے مسائل بیان کرتے ہیں اور سوال اٹھاتے ہیں اور اس کا مقصد انتظامیہ اور صوبائی حکومت کی ناکامیوں کا چھپانا بھی ہے ، من پسند اور منظورنظر لوگ ان کی ہاں میں ہاں ملاتے ہیں اوران کو سبز باغ دکھا کرمہمند کے عوام کو اندھرے میں رکھا جاتا ہے۔

پی پی پی مہمند کے رہنماؤں نے کہا کہ منشیات فروشی اور منشیات کا استعمال بیروزگاری کی وجہ سے روز بروز پروان چڑھ رہاہے۔ یکہ غنڈ غلنئی روڈ،امبار روڈ اور پنڈیالئی روڈ انتہائی ناگفتہ بہہ حالت میں ہونے سے عوام شدید مشکلات کے شکار ہیں ضلع مہمند کے طلباء کی تعلیمی حالت انٹرنیٹ اور وسائل نہ ہونے سے مخدوش ہورہی ہے۔شاہ سوار مہمند نے کہا کہ مقامی ملازمتوں پر غیری مقامی افراد کو بھرتی کیا جارہا ہے جوکہ سراسر نا انصافی ہے۔

انہوں نے کہا کہ گورسل بارڈر اور ناوا پاس بارڈر کو بند کرکے عوام کا معاشی قتل جاری ہے۔مچھر دانیوں کو سیاسی طور پر تقسیم کیا جارہا ہے جن کی مذمت کرتے ہیں ۔جنگریز خان نے کہا کہ ضلع مہمند میں ورسک ڈیم اور مہمند ڈیم کی موجودگی کے باوجود بجلی کا مسئلہ شدید سے شدید تر ہوتا جارہا ہے لوڈشیڈنگ کا دورانیہ دیہاتوں میں 48 گھنٹوں کو پہنچ چکاہے۔ارشد بختیار نے کہا کہ مقامی انتظامیہ سیاسی لوگوں کے خلاف ناکام پالیسی پر عمل پیرا ہے مرجر کے ثمرات عوام محروم کئے جارہے ہیں۔مہمند ڈیم سے متاثر خاندانوں اور ملازمتوں کے مسائل بدستور بڑھ رہے ہیں ڈی پی او مہمند سیاسی لوگوں کیخلاف ایف آئی آرز کرنا قابلِ مذمت ہے انتظامیہ اور صوبائی حکومت کرونا کی آڑ میں سچ پر پابندی لگانے مصروف ہیں۔

اس موقع پر آرشد خان نے کہا کہ مزدوروں اور اقلیت برادری کیساتھ مُسلسل بے انصافی جاری ہے اب تک مائننگ ایکٹ اور فیکٹری ایکٹ قبائلی اضلاع تک نہیں بڑھائے گئے۔مزدوروں کے لیے ہسپتال اور تربیت کا بندوبست نہیں ان کا کہنا تھا کہ ضلع بھر میں روزانہ کوئی نہ کوئی واقع رونما ہوتا ہے کم عمری اور زبردستی شادیاں،خواتین کے فروخت کا سلسلہ مسلسل جارہی ہے۔اور بھٹہ خشت میں مزدوروں کو غلام بنایا جارہا ہے۔

اس موقع پر جنگریز خان مہمند کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی 25 جنوری بروز پیر یکہ غنڈ ضلع مہمند میں انتظامیہ کی معاندانہ روش،ڈی پی او مہمند کے بے حسی کیخلاف بھر پور احتجاج کیا جارہا ہے۔جس میں مہمند سیاسی اتحاد کے لیڈر شپ کو بھر پور شرکت کی دعوت دیتے ہیں طلباء اور اساتذہ بھی خصوصی طورپر شرکت کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں

وانا، انتظامی محکموں میں اختیارات پر اختلاف، شہری تذبذب کا شکار

جنوبی وزیرستان میں مقامی سطح پر محکمہ پولیس، ضلعی انتظامیہ اور سکاؤٹس فورس کے اندورنی …