مہنگائی کا جن بے قابو‘ تخت بھائی میں یوٹیلیٹی سٹورز پر آٹا‘ چینی اور گھی نایاب

مارکیٹ میں تاجروں نے من مانے ریٹ مقرر کردیئے ‘ مقامی انتظامیہ غائب ‘ ڈپٹی کمشنر کھلی کچہریوں کے نام پر عوام کوٹرخا رہے ہیں

تخت بھائی ( نمائندہ شہباز) تخت بھائی میں مہنگائی کا بے قابو ‘یوٹیلٹی سٹورز پر آٹا ‘ چینی اور گھی نایاب‘ اشیائے خورد و نوش کے حصول کیلئے عوام ٹھوکریں کھانے پر مجبور‘ مارکیٹ میں تاجروں نے من مانے ریٹ مقرر کردیئے ‘ مقامی انتظامیہ غائب ‘ ڈپٹی کمشنر آئے روز کھلی کچہریوں کے نام پر عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کی کوشش کررہے ہیں

تخت بھائی کے سیاسی و سماجی حلقوں کا صوبائی حکومت سے اصلاح و احوال کا مطالبہ ‘تفصیلات کے مطابق کے شیر گڑھ ‘ لوند خوڑ‘ ہاتھیان‘ جلالہ ‘ساڑو شاہ ‘ فضل آباد اور پیر سدو میں دکانداروں نے انت مچا رکھی ہے‘ غریب عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹا جارہا ہے جبکہ یوٹیلٹی سٹورز پر چینی‘ گھی اورآٹا اور دالیں ناپید ہو چکی ہیں‘ ہفتہ بھر میں ایک بار آنے والی ضروریات زندگی کے حصول کیلئے عوام کی لمبی لمبی قطاریں لگی ہوتی ہیں جن میں زیادہ تر افراد اپنے گھروں کو کالی ہاتھ لوٹ جاتے ہیں ‘

عام مارکیٹوں میں گوشت فی کلو 500روپے‘ چھوٹا گوشت 950‘روپے ‘ بچھڑے کا گوشت 650‘ کباب 600‘ 20کلو آٹے کا تھیلا1250روپے‘ گھی کا پانچ کلو ڈبہ 1350‘ چینی 100روپے‘ برائلر چکن زندہ 370‘ لوبیا 240روپے ‘ دال ماش 240روپے فی کلو ‘ دودھ 120روپے ‘ دہی 120‘ چاول 170 ‘ دال چنا 140 کلو‘ سیب 150‘ کیلا 140روپے‘ امرود150‘ مالٹا 200روپے فی درجن فروخت ہورہے ہیں ‘ اس کے علاوہ چائے فی کپ 30روپے ‘ دودھ پتی فی کپ 40روپے جبکہ 80گرام کی روٹی 10روپے میں فروخت ہورہی ہے لیکن پوچھنے والا کوئی نہیں ‘

عوام نے صوبائی حکومت پر زور مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ گرانفروشوں کیخلاف سخت کارروائی کرکے غریبوں کو ریلیف فراہم کیا جائے ۔

یہ بھی پڑھیں

صوابی‘ مختلف واقعات کے دوران 2نوجوان جاں بحق

گلہ میں پستول صاف کرتے ہوئے نوجوان اپنی ہی گولی کا نشانہ بن گیا صوابی(نمائندہ …