وانا،زلی خیل وزیر قبیلے کا پولیس تھانوں کیخلاف لشکر کشی کا اعلان

وانا(نیک محمد وزیر)زلی خیل وزیرقبیلے نے مقامی ضلعی انتظامیہ اور پولیس فورس کی جانب سے غیرقانونی گرفتار ہونے والے زلی خیل وزیر کے سرکردہ عمائدین کی عدم رہائی کے خلاف وانا بازار میں گرینڈ جرگہ منعقد کیا،جرگے میں زلی خیل قبیلے کے علاوہ کثیر تعداد میں سماجی اور سیاسی افراد نے شرکت کی۔ ملک نورعلی کرمزخیل، ملک شیرین جان، ملک محمداسلم، ملک میردل، ملک گلازی اور ملک جنگ والی نے کہاکہ مقامی ضلعی انتظامیہ اور نااہل ڈی پی او شوکت علی دوسرے معتبر اہلکاروں کی ایماء پر قبائلی زعماء کی تذلیل کررہے ہیں باقی مذکورہ دونوں ادارے قانون نافذ کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہیں۔

ملک نورعلی اور ملک شیرین جان کہاکہ ڈی پی او نے ہمارے ساتھ وعدہ کیا تھا کہ گرفتار ہونے والے مشران کو سیشن کورٹ میں پیشی کے بعد ضمانت پر رہا کردیا جائے گا لیکن بدقسمتی سے سکاؤٹس فورس کی اعلیٰ قیادت کے خوف سے اسسٹنٹ کمشنر وانا اور ڈی پی او نے وعدہ پورا نہیں کیا جو افسوسناک ہے۔ آخرمیں قوم زلی خیل نے متفقہ طور پر فیصلہ کیا گیا کہ اگر آج تک مذکورہ گرفتار ہونے والے مشران کو ضمانت پر رہا نہ کیا گیا تو قوم زلی خیل کل سے 3ہزار لشکر کا اعلان کرتے ہو ئے پولیس سٹیشن وانا،اعظم ورسک اور تھانہ سپین پر احتجاجاً چڑھائی کرینگے ہرقسم کے نقصان کی ذمہ داری اے سی وانا اور ڈی پی او ساوتھ پر عائد کی جائے گی

انھوں نے یہ بھی اعلان کیا کہ جب تک عدالت کو ضلع جنوبی وزیرستان میں قائم نہیں کیا جاتا تب تک مقامی پولیس کو ہرگز نہیں مانیں گے۔ ملک محمد اسلم وزیر نے کہاکہ موجودہ حکومت سکاؤٹس فورس کی اعلیٰ قیادت کی ایماء پر وانا میں پرامن ماحول کو ثبوتاژ کرنے کی کوشش کر رہی ہے جوکہ شرمناک فعل ہے قوم نے کل پیر کے روز گرینڈ جرگہ طلب کرکے 3 ہزار لشکر تیار کرنے کا اعلان کردیا۔

یہ بھی پڑھیں

سلیم راز کی وفات سے پیدا ہونے والا خلاء کبھی پر نہیں ہوسگے گا، سردار حسین بابک

چارسدہ: عوامی نیشنل پارٹی خیبر پختونخوا کے جنرل سیکرٹری و ڈپٹی اپوزیشن لیڈر سردا ر …