جنوبی وزیرستان‘ دوتانی اور زلی خیل وزیرقبائل ایک بار پھر مورچہ زن

حکومت اور انتظامیہ کے سامنے اگر کسی فریق نے دستخط کرنے سے روگردانی کی تو قانونی کارروائی کی جائیگی ‘ ڈی سی جاوید اقبال کا انتباہ

وانا(نمائندہ شہباز)کارکنڑہ ملکیت تنازعے پر ضلعی انتظامیہ کیساتھ جاری مذکرات سے مایوسی کا شکار ہوکر دوتانی اور زلی خیل وزیرقبائل ایک بار پھر مورچہ زن ہو گئے‘

انگریز مثل پر مذکورہ دونوں متحارب قبائل متفق لیکن مقامی ضلعی انتظامیہ مثل دکھانے میں ناکام ہوکر دوتانی قبائل حکومتی مثل پر دستخط کرنے سے گریزاں ہوگئے ہیں دوتانی قبائل نے اپنا موقف اپناتے ہوئے ڈی سی جنوبی وزیرستان سے کہاکہ حکومت اور دوتانی و زلی خیل قبائل مثل کے تمام پیجز مشرانوں اور اہلکاروں کے سامنے رکھیں گے جس میں جو بھی درست اور اصلی مثل ہوگا تب فیصلے کیلئے راضی ہوں گے ورنہ مورچہ زنی ہمارا مقدر ہے‘

دوسری جانب زلی خیل قبائل مقامی ضلعی انتظامیہ کے ساتھ مثل پر دستخط کرچکے ہیں لیکن دوتانی قبائل دستخط کرنے میں روڑے اٹکا رہے ہیں ‘پولیس ذرائع کے مطابق ڈی سی جنوبی وزیرستان جاوید اقبال نے دونوں متحارب قبائل سے مذکرات کے دوران کہاکہ حکومت کے سامنے اگر کسی فریق نے دستخط کرنے سے روگردانی کی تو حکومت مخالف گروپ کیخلاف قانونی کارروائی کی جائیگی ‘

عوامی حلقوں کے مطابق مقامی ضلعی انتظامیہ اور پولیس فورس مذکورہ دلخراش واقعے کو کنٹرول کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہیں حکومت کی موجودگی میں ہزاروں کی تعداد میں مسلح مورچہ زن قبائل کیخلاف ایکشن نہ لینا سوالیہ نشان ہے۔

یہ بھی پڑھیں

شانگلہ، نامعلوم افراد کی فائرنگ سے باپ تین بیٹوں سمیت قتل

شانگلہ میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے باپ اور اس کے تین بیٹوں کو …